موٹاپے کا دیسی علاج

موٹاپے کا دیسی علاج
موٹاپے کا دیسی علاج،  wazan kam karna

دیسی طریقہ علاج میں بڑھے ہوئے پیٹ کو کم کرنے کےکئی طریقے موجود ہیں جن پر عمل کرکے پیٹ اور سینے کو ایک حد تک ایک ہی سطح پر لایا جاسکتا ہے لیکن اس میں مستقل مزاجی اور صبر کی ضرورت ہے کیونکہ پیٹ نہ ہی چند دنوں میں بڑھتا ہے اور نہ ہی  چند دنوں  میں کم کیا جاسکتا ہے۔
اگر انسان صحت مند او ر توانا ہو تو وہ ہر مشکل سے مشکل کام کو بھی کرنے کا پکا ارادہ کر لیتا ہے۔اورہر کام  اچھے انداز سے کرسکتا ہے لیکن بشرطیکہ وہ صحت مندہو۔اور صحت مند رہنے کے لیے آپ کو متوازن غذا کا استعمال اور جن اشیاء سے آپ کی صحت کو نقصان ہو سکتا ہے اُن سے پرہیز کرنا ضروری ہوگا۔
شہدسےپیٹ کم کرنا
ایک گلاس نیم گرم پانی میں آدھالیموں نچوڑیں اور ایک چمچ شہد  ملائیں ۔ اسے وقفے وقفے سے پیتے رہیں ۔ موٹاپا کم کرنے کے لیے انتہائی مفید اور کارآمد نسخہ ہے۔ اس نسخہ کو دن میں حسب ضرورت استعمال کرتے رہیں۔
لہسن سےوزن کم کرنا
ہر صبح دیسی لہسن کا  ایک یا دو جو کھانا بہت مفید ہوتا ہے ۔ اگر لہسن کا جو چھیل کر اسے چمچے سے پیس کر کھایا جائے اورساتھ ہی اس پر لیموں کا پانی پی لیا جائے تو ایک جانب تو خون کی روانی بہتر ہوتی ہے اور دوسری جانب پیٹ کی چربی کم کرنے میں مدد ملتی ہے۔

مزید پڑھیں:   پپیتا وزن کم کرنے میں فائدہ دیتا ہے

کلونجی سے وزن کم کرنا
کلونجی چائے والا آدھا چمچ لیں، اس کو ڈیڑھ کپ پانی میں ڈال کر ابالیں، جب پانی ایک کپ رہ جائے تو اس کو پی لیں۔ اس میں حسبِ ذائقہ سونف اور شہد بھی ڈال سکتے ہیں۔ یہ وزن کم کرنے اور بہت ساری بیماریوں سے بچنے کے لیے ہے۔ اس کو دن میں کم ازکم ایک بار اور چاہیں تو دو مرتبہ بھی پی لیں۔کلونجی کو چھان کر پیئں یا بغیر چھانے کوئی نقصان نہیں ہے۔
سونف سے وزن کم کرنا
دوگلاس پانی میں ایک کھانے کا چمچ سونف ڈال کر اتنا ابالیں کہ پانی ایک گلاس رہ جائے پھردس منٹ کے لئے اس پانی کو ڈھکن سے ڈھانپ لیں اس کے بعد چھان کر آدھا چائے کا شہد شامل کرکے اچھی طرح مکس کر کے نہارمنہ یہ پانی پی لیں۔ یہ عمل مسلسل چار ہفتوں تک کرنے سے پیٹ کی اضافی چربی اوروزن حیرت انگیز حد تک کم ہو جائے گا.
ورزش سے وزن کم کرنا
کھانے پینے میں احتیاط کرنے اور مختلف قسم کے نسخہ جات استعمال کرنے کے ساتھ ساتھ ورزش کرنا بھی بہت ضروری ہے۔جن لوگوں کی زندگی میں بھاگ دوڑ یا چلنا پھرنا کم ہوتا  ہے وہ اس کمی کو پورا کرنے کے لیے صبح یا شام 40 منٹ تیز قدموں سے واک کرنے کی عادت اپنا سکتے ہیں۔ تیز قدموں سے چلنا شروع کے دو ہفتوں میں ہی نتائج سامنے لے آتا ہے۔ دفتر میں اپنا کام کسی آفس بوائے سے کروانے کی بجائےخود کرنے کو ترجیح دیجیے تاکہ زندگی میں حرکت پیدا ہو۔ یاد رکھیے، آج تک کی گئی ہر تحقیق یہی بتاتی ہے کہ مسلسل بیٹھے رہنا زندگی کو کم کرتا ہے اور اس بارے میں اب تک کوئی دوسری رائے سامنے نہیں آئی۔

مزید پڑھیں: سبز چائے کے فائدے


Post a Comment

0 Comments