مجھے ننگا کرکے فرش پر الٹا لٹا دیا اور مارنا شروع کردیا: صحافی عمر چیمہ

مجھے ننگا کرکے فرش پر الٹا لٹا دیا اور مارنا شروع کردیا: صحافی عمر چیمہ
مجھے ننگا کرکے فرش پر الٹا لٹا دیا اور مارنا شروع کردیا: صحافی عمر چیمہ
مجھے ننگا کرکے فرش پر الٹا لٹا دیا اور مارنا شروع کردیا: صحافی عمر چیمہ 
عمر چیمہ اپنے اغٍوا سے متعلق انکشاف کرتے ہوئے کہا کہ جب انہیں اٹھایا گیا تو انہوں نے پہلےمیری  قمیض اتاری، پھر شلوار اتاری اور ننگا کرکے فرش پر الٹا لٹا دیا اور مارنا شروع کردیا۔۔ جب انہوں نے مجھے مارنا شروع کیا اس وقت مجھے ہتھکڑیوں سے باندھا ہوا تھا۔
عمر چیمہ کا کہنا تھا کہ اس وقت مشرف کی حکومت تھی اور جوڑتوڑ بہت زیادہ ہورہا تھا اور ایجنسیز بھی ملوث تھیں۔ اس وقت میرے ذہن میں آتا تھا کہ حساس ایجنسیاں غیر حساس کام کیوں کرتی ہیں۔ ان کا نام ضرور آنا چاہئے یہ جدھر بھی انوالو ہیں۔
اپنے اغوا کی داستان سناتے ہوئے عمرچیمہ نے کہا کہ یہ 4 ستمبر 2010 کی بات ہے میں اس وقت آئی 8 میں رہتا تھا۔ اس وقت کچھ گاڑیوں نے ان کا تعاقب کیا، انہیں گاڑی میں ڈالا، انکا پرس نکال لیا اور گھڑی نکال لی اور مجھے ہتھکڑی لگاکر میری آنکھوں پر پٹی باندھ دی
عمرچیمہ نے مزید کہا کہ مجھے الٹا لٹادیا گیا، مجھے ہتھکڑی بندھی ہوئی تھی، میری آنکھوں پر چادر بندھی ہوئی تھی اور مجھے مارنا شروع ہوگئے اور ساتھ ہی انہوں نے انکشاف کیا کہ میری فیملی گوجرانوالہ میں رہتی ہے اور میں ہر ویک اینڈ پر جاتا ہوں۔ انہوں نے مجھے کہا کہ ہم تو آپکا گکھڑمنڈی کے پاس انتظار کرتے رہے ہیں۔ انہیں اس بات کا بھی غصہ تھا کہ ہم ادھر بیٹھے رہے اور میں ادھر نہیں آیا۔
انہوں نے مجھے 20 سے 25 منٹ مارا، ان کے پاس ڈنڈا تھا اور ایک لیدرسٹک ٹائپ چھانٹا تھا ، چمڑے کی کوئی چیز نہیں۔ انہوں نے مجھے اٹھنے کو کہا مجھ سے اٹھا نہیں جارہا تھا، انہوں نے میری چادر ہٹائی تب تک انہوں نے خود ماسک پہنے ہوئے تھے۔
عمر چیمہ نے مزید بتایا کہ انہوں نے ظفراللہ جمالی کے وزیراعظم بننے، چئیرمین سینٹ میاں سومرو کی سیلیکشن اور کہوٹہ ریسرچ لیبارٹرز پر سٹوریز کیں۔ ان سے پوچھا جاتا رہا کہ ان خبروں کا سورس کیا ہے؟ کس نے سورس دیا ہے لیکن میں نے سورس دینے سے انکار کردیا۔
بشریٰ بی بی سے شادی سے متعلق عمرچیمہ کا کہنا تھا کہ مجھے معلوم ہے کہ ذاتی معاملہ ہے لیکن جب آپ ریحام خان کیساتھ فوٹوشوٹ کروائیں گے اور اپنی ذاتی زندگی کا ذکرکریں گے تو ہم لازمی رپورٹ کریں گے


Post a Comment

0 Comments