ہمیں کبھی امید نہیں چھوڑنی چاہئے

ہمیں کبھی امید نہیں چھوڑنی چاہئے
ہمیں کبھی امید نہیں چھوڑنی چاہئے
ہمیں کبھی امید نہیں چھوڑنی چاہئے
ایک دفعہ کا ذکر ہے  ایک تالاب  میں دو مینڈک رہتے  تھے جن میں سے ایک بہت پتلا اور دوسرا بہت موٹا تھا۔ ایک دن دونوں مینڈک بہت زیادہ  بھوکے تھے ۔وہ  کھانا تلاش کرتے  ہوئے ایک گھر میں داخل ہوگئے، انہوں نے  دیکھا کہ  گھر میں دودھ کا ایک بڑا پیالہ ہے پڑا، جس کے کنارے ہموار تھے۔دونوں مینڈکوں نے دودھ پینے کے لالچ کی وجہ سے پیالے میں چھلانگ لگا دی،جب دونوں نے دودھ پی لیا تو اس پیالے سے نکلنے   لگے تو   وہ پیالے سے باہر نہیں نکل پائے ۔
پیالے سے نکلنے کی کوشش میں دونوں مینڈکوں  نے چھلانگیں  لگانا شروع کر دیں ، لیکن موٹا مینڈک  جلد ہی تھک گیا تھا ، اس نے ہار مان لی  اور پیالے سے باہر نکلنے کی کوشش کے دوران  مر گیا،لیکن پتلا مینڈک ابھی بھی دودھ میں چھلانگ لگا کر باہر نکلنے کی کوشش کر رہا تھا۔
پتلے مینڈک نے ہمت نہیں ہاری اور وہ پیالے میں کودتا رہا۔کچھ دیر بعد اسے معلوم ہوا کہ اس کی چھلانگ کی وجہ سے دودھ کم  ہو  رہا ہے ، اب اس نے پہلے سے زیادہ تیزی سے دودھ میں کودنا شروع کردیا۔ جس کی وجہ سے پیروں کے نیچے کی جگہ ٹھوس ہوچکی تھی ، اس کی مدد سے مینڈک پیالے سے چھلانگ لگا دیتا تھا۔ آخر اس نے اپنی جان بچائی ۔اسے اپنے دوست کی موت پر بہت افسوس ہوا ، اگر وہ کچھ دیر جدوجہد کرتا تو شاید  بچ جاتا۔
تو دوستو ، یہ کہانی ہمیں سبق دیتی ہے کہ ہر انسان کی زندگی میں مشکلات آتی ہیں۔  البتہ اگر آپ ہمت نہیں ہارتے ہیں تو یہ یہ بہت بڑی بات ہے۔ اسی لئے ہمیں کبھی امید نہیں چھوڑنی چاہئے ، ہمیں مشکلات کا پوری طاقت  سے مقابلہ کرنا چاہئے۔

Post a Comment

0 Comments