ہمیں کبھی بھی کسی کی نقل نہیں کرنی چاہئے

ہمیں کبھی بھی کسی کی نقل نہیں کرنی چاہئے
urdu stories for kids ہمیں کبھی بھی کسی کی نقل نہیں کرنی چاہئے
ہمیں کبھی بھی کسی کی نقل نہیں کرنی چاہئے
ایک دفعہ کا ذکر ہے، ایک عقاب پہاڑ کی چوٹی  پر رہتا تھا اور وہاں پاس ہی  ایک درخت پر کوا رہتا تھا۔ کوا بہت سست اور  کاہل تھا، اس نے کھانے کی تلاش میں کبھی  بھی  سخت محنت نہیں  کی تھی ۔ وہ ہمیشہ آرام سے کھانے کا سوچتا تھا، وہ  جب بھی عقاب کو شکار کرتے دیکھتا تھا  اس کے ذہن میں یہ سوچ آتی تھی  کہ اگر وہ بھی عقاب کی طرح شکار کرنا سیکھ لے تو  ایک دفعہ شکار کرنے کے بعد وہ کئی دن آرام سے بیٹھ کر کھا سکتا ہے ۔
اگر وہ زندہ خرگوش شکار کرتا ہے تو کئی  دن تک وہ خوشی سے کھانے سے لطف اٹھائے گا۔ خرگوش کے شکار کا سوچ کر کوے کے منہ میں پانی آنے لگا۔
ایک دن کوے نے فیصلہ کیا ہے کہ وہ عقاب کی طرح خرگوش کا شکار کر  کے ہی واپس آئے گا۔ اگلے دن کوا جا کر پہاڑ پر بیٹھ گیا  جب کوے  نے خرگوش کو دیکھا تو پہاڑ سے اُڑ  کر  تیزی سے خرگوش کی طرف آنے لگا  اس کی خواہش تھی کہ وہ چھپٹ مارتے ہوئے خرگوش کو  پکڑنے کی کوشش کرے گا، دوسری طرف  خرگوش کوے کو دیکھتے ہی ایک پہاڑی میں چھپ گیا۔ کوا بہت تیزی سے نیچے آرہا تھا  وہ اپنے آپ کو سنبھال نہ پایا اور یہ چٹان سے ٹکرا گیا جس کی وجہ  سے کوا وہیں دم توڑ گیا۔
 اس کہانی  سےہمیں یہ سبق ملتا ہے کہ بغیر سوچے سمجھے ہمیں کبھی بھی کسی کی نقل نہیں کرنی چاہئے بلکہ اپنی صلاحیتوں پر توجہ دینی چاہئے۔

Post a Comment

0 Comments